مرے ساجد، مرے عاطف، مرے اصغر، مرے اکبر

آج اس سانحہ کو ہوئے 9 سال ہو رہے ہیں۔اہل خانہ کے آنسوں خشک ہو چکے ہیں۔لوگوں نے انصاف کی امیدوں سے منھ موڑ لیا ہے ۔مگر یہ یاد رکھنا چاہیئے کہ جیت حق و سچائی کی ہی ہوتی ہے۔

میری یہ بات سن کر ماسٹر صاحب زور کا ہنستے اور کہتے "یہ اور باڈی گارڈ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ؟ ۔ ؟ ۔ ؟ ڈھکر پانئچ, ڈھکر پائچ کرتے ہیں باڈی گارڈ بنیں گے ",

پردیسیوں کی زندگی دیکھنے والوں کی آنکھوں کو خیرہ تو کرتی ہے لیکن حقیقتا اسکی زندگی ایک سراب اور بن تعبیر ، خواب کے سوا کچھ نہیں

گاؤں کے بہت سارے لوگوں کی طرح ماسٹر بھیّا کے بارے میں ہمیں بھی کوئی علم نہ تھا۔ مگر جلد ہی یہ احساس ہوگیا کہ ماسٹر صاحب اور ابّا کے درمیان تعلقات اتنے ٹھوس ہیں کہ اس نفس ناتواں پر دھونس جمانے کا دونوں کو برابر حق حاصل ہے

حوصلہ نیوز سے بات کرتے ہوۓ شکیل اعظمی نے بتایا کہ یہ مشاعرہ بحرین کے ہوٹل ٹلپ کے ہال میں منعقد کیا گیا تھا جس میں ممبئی سے اعظمی شعراء میں میں نے شرکت کی اور سنجر پور کے رہنے والے فیضی اعظمی حال

غزالاں تم تو واقف ہو کہو مجنوں کے مرنے کی-- دیوانہ مر گیا آخر تو ویرانوں پہ کیا گزری

شبلی نیشنل کالج کو منی علی گڑھ کہا جا ئے تو بیجا نہ ہوگا

ایسی کامیاب زندگی اور سعادت مندی کم ہی لوگوں کو نصیب ہوتی ہے۔ دعا ہے کی اللہ تعالیٰ میرے استاد کی ایک ایک خدمت کو قبول فرمائے اور ہر خدمت کا بہترین اجر عطا فرمائے۔

نہ کسی لیڈر کو فرصت تھی کہ وہ افسوس جتائے، نہ کسی منسٹر کو توفیق ہوئی کہ وہ اہل خانہ کا حال دریافت کرے،

HOME || ABOUT US || EDUCATION || CRIME || HUMAN RIGHTS || SOCIETY || DEVELOPMENT || GULF || RELIGION || SPORTS || LITERATURE || OTHER || HAUSLA TV
© HAUSLA.NET - 2017.