دبستان شبلی و فراہی اپنے ناموروں سے خالی ہوتی جاتی ہے اور ہر خلا اتنا بڑا ہوتا ہے کہ اس کی جگہ لینے والا دوسرا موجود نہیں

اللہ مرحوم کی مغفرت فرمائے اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا کرے ، آمین

واضح رہے کہ 25 سالہ شیوم اعظم گڑھ شہر کے کھتری ٹولہ کے رہنے والےہیں اور آر بی آئی میں اسٹنٹ افسر کے منصب پر تعینات ہیں

اس موقع سے مدرسہ کے طلبہ و اساتذہ کے علاوہ مقامی لوگوں کی ایک بڑی تعداد موجود تھی۔

ان دو کتابوں میں پہلی شیخ سید سابق رحمہ اللہ کی مشہور کتاب فقہ السنہ جبکہ دوسری کتاب عجائب الدعاء : قصص واقعية معاصرة، مؤلف شیخ مسلم عبد العزیز الزامل

تقریب سنگ بنیاد میں مدرسہ کے اساتذہ، طلبہ کے علاوہ بڑی تعداد میں علاقہ کی سرکردہ شخصیات بھی موجود تھیں۔

بچپن میں جس چیز نے مجھے بہت آزمائش میں ڈالا وہ اساتذہ کی سختی اور مار پٹائی تھی۔

مدرستہ الاصلاح نے طلبہ کی بڑھتی تعداد کے پیش نظر نئی عمارت کی تعمیر کا اعلان کیا ہے

کتاب کے مصنف ڈاکٹر محمد مشفق اصلاحی مرحوم کا تعلق ضلع اعظم گڑھ کے مردم خیز قریہ نیاوج سے تھا۔ مکتب کی ابتدائی تعلیم کے بعد عالم اسلام کی مشہور درسگاہ مدرستہ الاصلاح سے فضیلت اور پھر شبلی کالج اور جواہر لال نہرو یونیورسٹی ہوتے ہوئے دہلی یونیورسٹی سے 2016 میں اردو

اطلاع کے مطابق اعلیٰ عہدے داران کو کئی دفعہ اس کی اطلاع کی گئی لیکن اس کے باوجود بھی ہینڈ پمپ صحیح نہیں ہوا جس کی وجہ سے لوگ کافی ناراض ہیں۔

HOME || ABOUT US || EDUCATION || CRIME || HUMAN RIGHTS || SOCIETY || DEVELOPMENT || GULF || RELIGION || SPORTS || LITERATURE || OTHER || HAUSLA TV
© HAUSLA.NET - 2019.