؞   ماہل میں ہوا علماء کونسل کا پروگرام
۲۷ دسمبر/۲۰۱۸ کو پوسٹ کیا گیا
ماہل (محمد اشرف /حوصلہ نیوز ): لوک سبھا انتخاب 2019 کی انتخابی سرگرمیوں کو مد نظر رکھتے ہوئے جمعرات کو روز راشٹریہ علماء کونسل نے پھولپور اسمبلی حلقہ کے ماہل بازار میں کارکنان کا ایک پروگرام منعقد کیا ۔ جس میں مہمان خصوصی کونسل کے جنرل سکریٹری مولانا طاہر مدنی نے کہا کہ آج پورا ملک مرکز کی بھاجپا سرکار کی عوام مخالف نیتیوں سے دکھی ہے۔ مہنگائی،کسانوں کی موت،نوٹ بندی،جی ایس ٹی و دوسرے عوام مخالف پالیسیوں سے سماج کا ہر طبقہ پریشان ہے۔ ایسے میں بھاجپا لیڈران بوکھلا گئے ہیں اور اناپ شناپ بیان دے رہے ہیں اور غلط قدم اٹھا رہے ہیں۔ نوئیڈا میں نماز روکنے کا فرمان جاری کرنا اسی بوکھلاہٹ کا اثر ہے۔ یہ فرمان مسلمانوں کے خلاف ہی نہیں بلکہ آئین کے بھی خلاف ہے اور ملک کی عوام اس کا جواب جلد دے گی۔ اصل مسئلوں سے لوگوں کا دھیان بھٹکانے کے لیئے ایک طرف تو بھاجپا لیڈران آئے دن ہنومان جی کی ذات اور دھرم بدل رہے ہیں اور ملک کے کروڑوں ہندؤں کی آستھا کو چوٹ پہونچا رہے ہیں تو وہیں نوئیڈا میں نماز روکنے کا فرمان جاری کر مسلمانوں کی آستھا سے کھیل رہے ہیں۔ عوام اب سب سمجھ رہی ہے کہ بھاجپا سرکار صوبہ سے لے کر دلی تک ہر محاذ پر ناکام ہو چکی ہے تو ایسے میں بیہودہ بیان اور مذہبی نعروں میں عوام کو الجھائے رکھو تاکہ ذات مذہب سے پھر کرسی کا مزہ چکھا جا سکے۔ وہیں اترپردیش میں قانون کے نام پر آئی یوگی سرکار عام آدمی کو نا تو تحفظ دے پا رہی ہے نہ ہی سرکار چلا پارہی ہے۔
مولانا نے مزید کہا کہ آج صوبہ میں جرم،ظلم و زیادتی کا بول بالا ہے یہاں تک کہ پولس بھی محفوظ نہیں ہے۔ ان حالات میں بھی صوبہ کے موجودہ حزب اختلاف پارٹیاں نہ صرف اپنے منھ سلے ہوئے ہیں بلکہ خاموش تماشائ بنے ہوئے ہیں اور سڑک پر اتر کر مخالفت کرنے کو بھی تیار نہیں ہیں کیونکہ انہیں عوام سے کوئی سروکار نہیں بلکہ یہ چاہتے اور جانتے بھی ہیں کہ عوام کے پاس متبادل نہیں ہے تو عوام خود ہی اگلی دفعہ ہمیں ہی چنے گی۔ یہاں اترپردیش میں تو دونوں سپا بسپا حزب اختلاف پارٹیاں خاموش ہیں۔ ان حالات میں عوام متبادل کی تلاش میں ہے اور ایسے میں چھوٹے سیاسی پارٹیوں کا رول اہم ہو جاتا ہے۔ اس لئے ضرورت اس بات کی ہے کہ علماء کونسل کے کارکنان و عہدیداران سڑک پرعوام کے حقوق کی لڑائ لڑیں اور عوامی پیمانے پر مظاہرے کریں۔ آج جب سب خاموش ہیں تو آپ کا فرض ہے کہ آپ عام آدمی کی آواز بنیئے اور ظلم کے خلاف مظلووں اور غریبوں کی آواز بنیں۔
صوبائ صدر انل سنگھ نے کہا کہ آج ملک بھر میں ذات مذہب کی سیاست کی جا رہی ہے جس سے عوام پریشان ہو چکی ہے۔ عوام وکاس چاہتی ہے۔ ذات اور مذہب کے نام پر لوگوں کو 2014 میں تو بہکا کیا گیا پر اب عوام دوبارہ انکے بہکاوے میں نہیں آنے والی۔ 70 سال سے مسلمانوں کا ووٹ بھاجپا کا ڈر دکھا ان نام نہاد سیکولر جماعتوں نے لیئے لیکن کبھی بھی مسلم سماج کو اس کا حق نہیں دیا۔ آج آپ کے پاس موقع ہے کہ اپنی قیادت راشٹریہ علماء کونسل کو مظبوط کریں۔
قومی ترجمان طلحہ رشادی نے کارکنان اور عہدیداران کو عوام کے بیچ جا کر بیداری پھیلانے اور پارٹی کو مظبوط کرنے پر زور دیا اور کہا کہ جمہوریت میں اسی سماج کی آواز سنی جاتی ہے جس کی اپنی لیڈر شپ ہوتی ہے۔ اسی کے حقوق ملتے ہیں جو سماج سڑک پر جمہوری طریقوں سے اپنے حقوق کو مانگتا ہے۔ آج کونسل ایک متبادل کی شکل میں آپ کے پاس موجود ہے، اپنے اتحاد سے اس کو مظبوطی فراہم کریں۔ اجلاس کو مفتی غفران قاسمی،نورالہدی انصاری نے بھی خطاب کیا۔
پروگرام کی صدارت ضلع صدر شکیل احمد و نظامت کے فرائض افضل چمن نے انجام دیا۔ اس موقع پر اسمبلی حلقہ پھولپور صدر محمد عامر،نگرپنچایت صدر دلشاد،سفیان،شیرو،اعظم،حافظ نسیم،مجیب اللہ،کلیم،سالم،عرفات،عبدالرحیم،بیربل گوتم،منیرام،احتشام وغیرہ کے علاوہ سیکڑوں کارکنان موجود تھے۔

1 لائك

0 پسندیدہ

0 مزہ آگیا

0 كيا خوب

0 افسوس

0 غصہ


 
؞ ہم سے رابطہ کریں

تبصرہ / Comment
آپ کا نام
آپ کا تبصرہ
کود نقل کريں
؞   قارئین کے تبصرے
تازہ ترین
سیاست
تعلیم
گاؤں سماج
HOME || ABOUT US || EDUCATION || CRIME || HUMAN RIGHTS || SOCIETY || DEVELOPMENT || GULF || RELIGION || SPORTS || LITERATURE || OTHER || HAUSLA TV
© HAUSLA.NET - 2019.