؞   جامعۃ الطیبات طوی میں تعلیمی کارواں کا پروگرام
۹ اکتوبر/۲۰۱۸ کو پوسٹ کیا گیا
طویٰ /جامعۃ الطیبات (حوصلہ نیوز): سرائے میر کے پاس طویٰ میں واقع جامعۃ الطیبات میں منگل کو دہلی سے ایک تعلیمی کارواں کی آمد پر ایک پروگرام منعقد کیا گیا جس میں جامعہ کی طالبات اور اساتذہ کے علاوہ قرب وجوار کی علمی شخصیتیں اور طالبات کے سرپرست کثیر تعداد میں موجود تھے۔
پروگرام کی صدارت کررہے شاہین گروپ بیدر کے ڈائرکٹر عبدالقدیر صاحب نے کرناٹک میں اپنے تعلیمی تجربات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ آج مخلوط تعلیم کی وجہ سے سماج پر تعلیم کے برے اثرات پڑرہے ہیں۔ بیدر میں میں طالبات کی نمایاں کامیابیوں کا ذکر کرتے ہوئےآپ نے کہا کہ یہ طالبات اس قدر ذہین اور محنتی ہیں کہ ان کی اگر صحیح طریقہ سے رہنمائی کی جائے تو مزیداچھا نتیجہ سامنے آئے گا اور ایک اچھا معاشرہ وجود میں آئے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ تعلیم اب اپنے روایتی انداز سے ہٹ چکی ہے،آج سے بیس سال پہلے تعلیم کا یہ حال تھا کہ ڈاکٹر کا بیٹا ہی ڈاکٹر بنتا تھا لیکن آج ایک رکشہ چلانے والے کا بیٹا بھی ڈاکٹر بن رہاہے۔
ڈاکٹر سکندر اصلاحی نے تعلیمی کارواں کا مقصد بتاتے ہوئے کہا کہ ہم صرف تعلیم کا ارادہ نہ کریں بلکہ اس کے لئے کمر بستہ ہوجائیں۔ آپ نے کہا کہ آج مسلمانوں کی تعلیمی پسماندگی کا واویلا مچایا جارہا ہے جو بالکل غلط ہے، جو لوگ کلمہ لا الہ پڑھ لیں وہ دوسری قوموں سے کہں زیادہ تعلیم یافتہ اور مہذب ہیں۔ تعلیمی مسائل کے ساتھ ساتھ دیگر سماجی، معاشی مسائل سب ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں، ہمیں سب کو ایک ساتھ لے کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔
پرسنالٹی ڈیویلپمنٹ کےمیدان کےماہر سعیداحمد نے اپنی گفتگو میں کہا کہ آج طلبہ اور طالبات کو تعلیم سے زیادہ تربیت کی ضرورت ہے۔ تعلیم بچوں کو جہاں علم سے آراستہ و پیراستہ کرتی ہے وہیں تربیت ان کو سنوارتی اور بناتی ہے۔
مولانا طاہر مدنی نے مکاتب کی اہمیت پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم کی اصل بنیاد گاؤں کے مکاتب ہیں اور بنیاد صحیح ہوئی تو آگے کے مراحل بھی صحیح ہوں گے لیکن آج گاؤں کے مکاتب کا برا حال ہے وہ ختم ہوتے جارہے ہیں۔
ناظم جامعہ مولانا عتیق الرحمن اصلاحی صاحب نے نظامت کے فرائض انجام دئے اور آخر میں تمام مہمانوں کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا اور کہا کہ یہ جو شخصیتیں اس وقت یہاں پر موجود ہیں ان کے لئے ایک بزم کی نہیں بلکہ ہر ایک کے لئے ایک ایک بزم کی ضرورت ہے، اگر یہ شخصیات اسی طرح ان طالبات کو اپنے تجربات سے مستفید ہونے کا موقع دیتے رہے تو ان کے علم میں کافی اضافہ ہوگا۔
پروگرام کا آغازتلاوت قرآن سے ہوا اس کے بعد جامعۃ الطیبات کی طالبات نے جامعہ کا ترانہ پیش کیا۔اس موقع پر مولانا عارف اصلاحی، مولانا اصغر اصلاحی ، مولانا دلشاد اصلاحی جامعی، مولانا عمر اسلم اصلاحی، وغیرہ موجود تھے۔


2 لائك

0 پسندیدہ

0 مزہ آگیا

4 كيا خوب

0 افسوس

0 غصہ


 
؞ ہم سے رابطہ کریں

تبصرہ / Comment
آپ کا نام
آپ کا تبصرہ
کود نقل کريں
؞   قارئین کے تبصرے
تازہ ترین
سیاست
تعلیم
گاؤں سماج
HOME || ABOUT US || EDUCATION || CRIME || HUMAN RIGHTS || SOCIETY || DEVELOPMENT || GULF || RELIGION || SPORTS || LITERATURE || OTHER || HAUSLA TV
© HAUSLA.NET - 2018.