؞   بٹلہ ہاؤس فرضی انکاؤنٹر: علماء کونسل 19 ستمبرکو دہلی میں کرے گی احتجاج
۱۷ ستمبر/۲۰۱۸ کو پوسٹ کیا گیا
اعظم گڑھ (ابوزید/حوصلہ نیوز): بٹلہ ہاؤس فرضی انکاونٹر کی دسویں برسی پر علماءکونسل دہلی میں وزیر اعلیٰ اروند کجروال کا گھیراؤ کرے گی اور ان سے بٹلہ ہاؤس فرضی انکاونٹر کی عدالتی جانچ کا مطالبہ کرے گی ۔
بٹلہ ہاؤس فرضی انکاؤنٹر کے اس سانحہ کو 19 ستمبر 2018 کو دس سال مکمل ہورہے ہیں اس موقع پر علماء کونسل دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کجروال کا گھیراؤ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ علماءکونسل کے جنرل سکریٹری مولانا طاہر مدنی نے اپنے ایک فیس بک پوسٹ میں لکھا ہے کہ کونسل نے یہ طے کیا ہے کہ دہلی پردیش کے وزیر اعلیٰ اروند کجروال کا گھیراؤکیا جائے گا اور ان کو اپنا وعدہ یاد دلایا جائے گا ۔ انہوں نے سکھ مخالف فسادات کے لئے جانچ کا اعلان کیا تو آخر بٹلہ ہاؤس فرضی انکاؤنٹر کے لئے جانچ کیوں نہیں؟ جمہوریت میں سب کو برار کا حق حاصل ہے، دوہرے معیار کے لئے کوئی گنجائش نہیں ہے۔ جانچ ہی سے سچائی واضح ہوگی۔ ہم یہ نہیں کہ رہےہیں کہ جانچ سید بخاری یا عامر رشادی صاحب سے کرائیں، ہم تو محض یہ کہ رہے ہیں کہ سرکار ایس آئی ٹی کی تشکیل کردے اور منصفانہ جانچ کرادے۔
واضح رہے کہ 19 ستمبر 2008 کو نئی دہلی کے بٹلہ ہاؤس میں واقع ایک فلیٹ میں اعظم گڑھ کے دو نوجوان (عاطف امین اور محمد ساجد) کو دہلی پولیس نے ہلاک کردیا تھا۔ یہ دونوں نوجوان سنجرپور گاؤں کے رہنے والے تھے اور دہلی میں تعلیم حاصل کررہے تھے۔ پولیس کا دعویٰ ہے کہ ان کی ہلاکت انکاؤنٹر میں ہوئی ہے جس میں پولیس کے ایک اہلکار کی بھی موت ہوگئی تھی۔ متعدد حقوق انسانی کی تنظیموں اور اعظم گڑھ کے عوام نے اس تصادم کو فرضی قرار دیتے ہوئے آزادانہ جانچ کا مطالبہ کیا تھا لیکن حکومت نے ابھی تک اس مطالبے کو منظور نہیں کیا ہے۔

3 لائك

2 پسندیدہ

0 مزہ آگیا

0 كيا خوب

1 افسوس

1 غصہ


 
؞ ہم سے رابطہ کریں

تبصرہ / Comment
آپ کا نام
آپ کا تبصرہ
کود نقل کريں
؞   قارئین کے تبصرے
تازہ ترین
سیاست
تعلیم
گاؤں سماج
HOME || ABOUT US || EDUCATION || CRIME || HUMAN RIGHTS || SOCIETY || DEVELOPMENT || GULF || RELIGION || SPORTS || LITERATURE || OTHER || HAUSLA TV
© HAUSLA.NET - 2018.