؞   بٹلہ ہاؤس فرضی انکاونٹر برسی: علماء کونسل نے پھر دہرائی عدالتی جانچ کی مانگ
۱۹ ستمبر/۲۰۱۷ کو پوسٹ کیا گیا
سرائے میر (حوصلہ نیوز):سرائے میر کے کھریواں موڈ پر بٹلہ ہاؤس فرضی انکاونٹر کی نویں برسی پر علماء کونسل نے ایک بار پھر ریاستی اور مرکزی حکومت سے اس انکاونٹر کی عدالتی جانچ کرنے کی مانگ کی ہے۔
کھریواں موڈ پر منگل کونسل کے کارکنان نے بہت ہی جوش و خروش کے ساتھ احجاجی پرگرام میں حصہ لیا۔ اس موقع پر علماء کونسل کے راشٹریہ صدر مولانا عامر رشادی نے حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ
خود کو سیکولر کہنے والی پارٹیاں کانگریس، سماجوادی پارٹی اور بی ایس پی نے 60 سال تک بی جے پی کا ڈر دکھا کر مسلمانوں کا ووٹ لیا اور مسلمانوں کو ہی فرضی مقدموں میں پھنسانے اور سرکاری مشینری کے ذریعے مروانے کا کام کیا، آج ہی کے دن بٹلہ ہاؤس دہلی میں اعظم گڑھ کے معصوم بچوں کا فرضی انکاؤنٹر کیا گیا تھا، اس واقعے کے بعد سے ہی علماء کونسل نے مقدمہ کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے لیکن اب تک حکومت نے اس کی جانچ نہیں کی ہے۔
مولانا رشادی نے کھریواں موڑ سرائے میر میں بٹلہ ہاؤس فرضی انکاؤنٹر کی نویں برسی پر احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہلی کے بٹلہ ہاؤس میں ۱۹ ؍ ستمبر ۲۰۰۸ میں اعظم گڑھ کے دو نوجوان عاطف امین اور محمد ساجد کو فرضی انکاؤنٹر کردیا گیا تھا۔اسی دن سے علماء کونسل کے لوگ سپریم کورٹ کے جج سے عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کر رہے ہیں اور ہم یہ مطالبہ اس وقت تک کرتے رہیں گے جب تک اس کی تحقیقات شروع نہیں ہو جاتی ہے اور ہمیں انصاف نہیں مل جاتا۔
راشٹریہ علماء کونسل کے خزانچی مولانا شہاب اختر نے مرکزی حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم ہر کسی کی ترقی کے بارے میں بات کرتے ہیں کیا انصاف کے بغیر کوئی ترقی ممکن ہے؟

11 لائك

0 پسندیدہ

0 مزہ آگیا

0 كيا خوب

0 افسوس

0 غصہ

 
؞ ہم سے رابطہ کریں

تبصرہ / Comment
آپ کا نام
آپ کا تبصرہ
کود نقل کريں
؞   قارئین کے تبصرے
تازہ ترین
سیاست
تعلیم
گاؤں سماج
HOME || ABOUT US || EDUCATION || CRIME || HUMAN RIGHTS || SOCIETY || DEVELOPMENT || GULF || RELIGION || SPORTS || LITERATURE || OTHER || HAUSLA TV
© HAUSLA.NET - 2017.