؞    ماسٹر اقبال صاحبؒ: یاد آرہے ہیں
۱۶ ستمبر/۲۰۱۷ کو پوسٹ کیا گیا
(تحریر: صابر علی (مدرسۃ الاصلاح سرائے میر
ویسے بھی ہماری زندگی کا بیشتر حصہ موبائل اسکرین اوپر نیچے کرنے میں گزر رہا تھاکہ واٹس اپ کے نئے ورژن نے ایک اور ذمہ داری میں اضافہ کر دیا پہلے تو ہم ایک پروفائل لگا کر ہفتوں , مہینوں آرام سے گزار دیا کرتے تھے لیکن اب پروفائل کے ساتھ ساتھ ہمیں اسٹیٹس کا جامہ بھی بدلنا پڑتا ہے ۔ اگر کسی دن جانے انجانے آپ نے نیا اسٹیٹس نہیں لگایا تو جان لیجئے کہ آپ کا پچھلا لگایا ہوا اسٹیٹس آپ کی اجازت لئے آپ کے اسٹیٹس کالم کو سونا کر کے چلا جائے گا ۔
یہی حال میرا بھی ہے , جب میں اپنے اسٹیٹس کو خالی دیکھتا ہوں تو مجھے جلدی اس بات کی ہوتی ہے کہ فوراً کوئی تصویر , کوئی شاعری یا کوئی ویڈیو لگادوں ۔
میری فطرت کچھ ایسی واقع ہوئی ہے کہ میں ان تمام فوٹوز کو سیو کر لیتا ہوں جو مجھے اچھے لگتے ہیں چاہے وہ فوٹو کسی کی پروفائل کا ہو يا فیسبک کا ہو یا انسٹاگرام کا یا اسی طرح کسی دوست یار کی موبائل میں ہو غرضیکہ فوٹوز مجھے بہت اچھے لگتے ہیں ان میں لکھی حکمت بھری باتیں ان میں چھپی پوشیدہ حکمتیں اسی طرح دل کو چھو جانے والے نظارے سرسبز شاداب جنگلات گویا کہ میں خالی اوقات میں بجائے کسی اور مشغولیت کے فوٹوز کی ان سحر بھری دنیا میں مست و مگن اس کی رنگینیوں میں گم رہتا ہوں .
لیکن آج جب میں اپنے گزشتہ خوشیوں بھرے اوراق سے اپنی کچھ ساتھیوں کی تصویر نکال رہا تھا کہ انگوٹھے کی انگلی نے ایک ایسا نظارہ دیکھایا کہ آنکھیں اشک بار ہوگئیں , دماغ ایک ریسیور کی طرح پچھلی وہ تمام بات یاد دلانے لگا جو کبھی ہم تمام ساتھیوں نے مل کر بنائی تھیں ۔
طلبہ عربي ہشتم کے میرے وہ تمام ساتھی اپنے اپنے کارناموں کے ساتھ یاد آنے لگے جو کبھی مادر علمی کی گود میں کھیلا کودا کرتے تھے اور میرے وہ مشفق مربی استاد زوروں سے یاد آئے جو ہمیں سال گزشتہ چھوڑ کر چلے گئے. میں استادِ محترم ماسٹر اقبال صاحبؒ کی بات کر رہا ہوں۔
جب میری نظر مہمان خانہ کے باہر لي گئ اس تصویر پر پڑی جس میں ہمارا ساتھی " شیخ نہال " کچھ اور ساتھیوں کے ساتھ ماسٹر مرحوم کے پیچھے ایک تندرست و توانا ایکٹیو باڈیگارڈ کی طرح چلتا ہوا نظر آرہا ہے اور ماسٹر مرحوم ایک بادشاہ کی طرح پوری شان و شوکت سے بڑھتے ہوئے دکھ رہے ہیں ۔
اس تصویر کو دیکھ کر دل دکھ سا گیا اور مجھے میرے وہ دن یاد آنے لگے جب ہم طلبہ عربي ہشتم مولانا سرفراز صاحب اصلاحی کی غیر موجودگی میں انکی آخری گھنٹی خالی ہونے کی وجہ سے ماسٹر مرحوم کے ہمراہ ساتویں گھنٹی بعد باہر نکل جایا کرتے تھے ۔
کلاس سے نکلتے وقت جب ماسٹر صاحب دھیمے قدموں سے چلتے تو میں ہٹو بچو کا اشارہ کرتے ہوئے کہتا کہ" ماسٹر صاحب ہم آپ کے باڈیگارڈ ہیں ,
دیکھئے تو صحیح آپ آگے آگے اور ہم ایک کمانڈوز کی طرح آپ کے دائیں بائیں چل رہے ہیں ,(مذاقاً مولانا صاحب کہہ کر کہتے کہ
" مولانا صاحب ہمیں فخر محسوس ہوتا ہے آپ کے ساتھ اس طرح چلتے ہوئے "میری یہ بات سن کر ماسٹر صاحب زور کا ہنستے اور کہتے
"یہ اور باڈی گارڈ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ؟ ۔ ؟ ۔ ؟ ڈھکر پانئچ, ڈھکر پائچ کرتے ہیں باڈی گارڈ بنیں گے ",

12 لائك

5 پسندیدہ

0 مزہ آگیا

0 كيا خوب

1 افسوس

0 غصہ

 
؞ ہم سے رابطہ کریں

تبصرہ / Comment
آپ کا نام
آپ کا تبصرہ
کود نقل کريں
؞   قارئین کے تبصرے
تازہ ترین
سیاست
تعلیم
گاؤں سماج
HOME || ABOUT US || EDUCATION || CRIME || HUMAN RIGHTS || SOCIETY || DEVELOPMENT || GULF || RELIGION || SPORTS || LITERATURE || OTHER || HAUSLA TV
© HAUSLA.NET - 2017.